سلم

سلم :

سلم خرید و فروخت ( بیع) کا ایک ایسا معاملہ ہے جس میں فروخت کرنے والا(بائع) یہ ذمہ داری قبول کرتا ہے کہ وہ مستقبل کی کسی متعین تاریخ میں متعین چیز خریدار کو فراہم کرے گا اور اس کے بدلے میں وہ مکمل قیمت بیع(معاملے) کے وقت پیشگی (نقد )لے لیتا ہے یعنی اس میں قیمت ایڈوانس اور خریدی جانے والی چیز کی فراہمی مؤخر (ادھار )ہوتی ہے ۔

اسلامک بینکنگ میں سلم ایسے کسٹمرز کیلئے استعمال ہوتا ہے جو اپنی اشیاء (جن کا معیار اور مقدار صحیح طرح متعین ہو سکے )کو پیشگی (نقد ) ادائیگی کے عوض فروخت کرنا چاہتے ہیں، تاکہ اس رقم(فنڈز) کو اپنے کاروبار میں استعمال کر سکیں۔ سلم میں فروخت کرنے والے کا بھی فائدہ ہے کیونکہ اسے قیمت پیشگی وصول ہو جاتی ہے، اور خریدار کا بھی فائد ہ ہے کیونکہ پیشگی (ایڈوانس )ادائیگی کی صورت میں قیمت نقد ادائیگی کے مقابلے میں نسبتاً کم ہوتی ہے۔

خصوصیات اور فوائد :

  • سلم کی سہولت چھوٹے ،درمیانی، کمرشل انٹر پرائزز اور کارپوریٹ ا دارے حاصل کر سکتے ہیں۔
  • سلم درمیانی اورمختصر مدت کی فائنانسنگ کیلئے ایک آئیڈیل طریقہ ہے، کیونکہ اس میں آ سان (لچکدار ) شرائط کی بنیاد پر کسٹمرز کی مالیاتی ضروریا ت پورا کرنے کی صلاحیت موجود ہے۔
  • سلم کی سہولت ایک آئیڈیل ورکنگ فائنانس کا حل فراہم کرتی ہے ۔