مرابحہ

مرابحہ:

مرابحہ اپنی اصل کے اعتبار سے خرید و فروخت ( بیع) کی ایک قسم ہے۔ وہ خصوصیت جو اسے خرید وفروخت(بیع) کی باقی اقسام سے ممتاز کرتی ہے، وہ یہ ہے کہ مرابحہ میں فروخت کرنے والا(بائع) صراحتاً خریدار کو یہ بتاتا ہے کہ اُس کی اُس (بیچی جانے والی) چیز پر کتنی لاگت آئی ہے اور وہ اس لاگت پر کتنا نفع کماناچاہتا ہے۔ اگر کوئی شخص کوئی چیز ایک متعین قیمت پر فروخت کرتا ہے اور اس میں لاگت کا کوئی حوالہ نہیں دیتا تو ایسا معاملہ مرابحہ نہیں کہلائے گا، اگر چہ وہ اپنی لاگت پرکچھ نفع کمارہاہوپھر بھی یہ مرابحہ نہیں کہلائے گا ،کیونکہ اس نے اس میں اپنی لاگت اور منافع کا ذکر نہیں کیا۔

اسلامک بینکنگ میں جہاں خرید ار کو اشیاء کی خریداری کیلئے فنڈز کی ضرورت ہوتی ہے،وہاں مرابحہ ایک طریقہ تمویل کے طور پر استعمال ہوتا ہے۔ خریدار (کسٹمر)مرابحہ کی سہولت حاصل کرنے کے لیے ان اشیاء کا انتخاب کرتا ہے جو اشیاء وہ مرابحہ کی سہولت کے تحت خریدنا چاہتا ہے۔ بینک سپلائر سے وہ اشیاء خرید کر کسٹمر کو( لاگت اورمنافع ظاہر کرکے) ایک متعین قیمت پر نقد یا ادھار فروخت کر دیتا ہے۔

خصوصیات اور فوائد :

  • مرابحہ کی سہولت چھوٹے ،درمیانی، کمرشل انٹر پرائزز اور کارپوریٹ ادارے حاصل کر سکتے ہیں۔
  • مرابحہ مختصر مدت کی فائنانسنگ (تمویل )کیلئے ایک آئیڈیل طریقہ ہے،کیونکہ اس میں آ سان (لچکدار ) شرائط کی بنیاد پر کسٹمرز کی مالیاتی ضروریا ت پورا کرنے کی صلاحیت موجود ہے۔
  • خام مال کی فائنانسنگ (تمویل ) کیلئے مرابحہ ایک آئیڈیل طریقہ تمویل ہے ۔